آبادی میں کمی کیلئے مذہبی سکالرز،سول سوسائٹی اورحکومت اقدامات کریں: سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے بڑھتی ہوئی آبادی سے متعلق کیس کے فیصلے میں کہا ہے کہ آبادی میں کمی کیلئے مذہبی سکالرز، سول سوسائٹی اور حکومت اقدامات کریں۔چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے بڑھتی ہوئی آبادی سے متعلق کیس کی سماعت کی تھی، سپریم کورٹ نے کیس کی سماعت کے بعد فیصلہ جاری کردیا۔عدالت عظمیٰ نے اپنے فیصلے میں قرار دیا کہ بڑھتی ہوئی آبادی ایک بم کی طرح ہے، بڑھتی ہوئی آبادی سے وسائل پر دباؤ ہے، یہ آئندہ نسلوں کے مستقبل کا سوال ہے، آبادی کنٹرول نہ کرنا بدقسمتی ہو گی، دو بچے فی گھرانہ سے بھی آبادی پر قابو پانے سے مدد ملے گی، آبادی کم کرنے کے لیے باقاعدہ مہم چلانے کی ضرورت ہے۔سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں مزید کہا ہے کہ آبادی کی منصوبہ بندی کے لیے پوری قوم کو ساتھ چلنا اور اس چیلنج سے لڑنا ہو گا، ریاست کے تمام ستونوں کو آبادی میں اضافے کی سفارشات پر مل کر کام کرنا ہوگا، مذہبی اسکالرز، سول سوسائٹی اور حکومت آبادی کم کرنے کے لیے اقدامات کریں۔

Email This Post

آپ یہ بھی پسند کریں گے مصنف سے زیادہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.