رینجرز ریکروٹس کی 27 ویں پاسنگ آؤٹ پریڈ

رینجرز ٹریننگ سینٹر اینڈ اسکول کراچی میں رینجرز ریکروٹس کی 27 ویں پاسنگ آؤٹ پریڈ کی ایک پُر وقار تقریب منعقد ہوئی۔ تقریب کے مہمانِ خصوصی گورنر سندھ عمران اسماعیل تھے۔

ڈائریکٹر جنرل پاکستان رینجرز (سندھ) میجر جنرل عمر احمد بخاری نے گورنرسندھ عمران اسماعیل کا پریڈ گراؤنڈ پہنچے پر استقبال کیا۔

مہمانِ خصوصی گورنر سندھ عمران اسماعیل کو چاک و چوبند دستوں نے سلامی پیش کی۔

مہمان خصوصی نے دورانِ ٹریننگ اعلیٰ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے ریکروٹس میں انعامات تقسیم کئے۔

گورنر سندھ نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اِس شاندار پریڈ پر میں پاس آؤٹ ہونے والے ریکروٹس اُن کے والدین اور اساتذہ کو مبارک باد پیش کرتا ہوں۔ آج کا دن اِن ریکروٹس کے لیے نہایت اہمیت کا حامل ہے کہ وہ پاکستان رینجرز سندھ جیسے قابل فخر ادارے کا حصہ بن رہے ہیں۔ یہ دن اِن کے مستقبل میں سنگِ میل کی حیثیت رکھتا ہے۔

عمران اسماعیل نے مزید کہا کہ سندھ رینجرزکا کردار کراچی میں بحالیِ امن میں نہایت اہم ہے اور رینجرز ایک جری اور قابل ستائش فورس کے طور پر جانی جاتی ہے۔ کراچی سے دہشت گردوں کے خاتمے میں بھی رینجرز نے اہم کردار اداکیا ہے۔ آج رینجرز کی کاوشیں صوبے بھر میں بحالی امن کی صورت میں نظر آرہی ہیں۔

گورنر سندھ نے اس بات پر خصوصی زور دیا کہ شہر میں امن کی بحالی کے چھ برس میں رینجرز نے اہم کامیابیاں حاصل کی ہیں۔19 ہزار سے زائد آپریشن کر کے14 ہزار سے زائد دہشت گرد اور جرائم پیشہ افراد کو ر ینجرز نے گرفتار کیاہے۔

انہوں نے کہا کہ آج بحالی امن کے ذریعے کراچی کو معاشی وتجارتی استحکام بخشنے میں رینجرز کا کلیدی کردار ہے جس کا واضح ثبوت بین الاقوامی سطح پر تجارتی وفود اور غیر ملکی کھلاڑیوں کی کراچی آمد ہے۔

گورنر عمران اسماعیل نے مزید کہا کہ سندھ رینجرز کے شہداء کو سلام پیش کرتا ہوں، اس فورس کی کامیابی کا سہرا اس کے افسران اور جوانوں کے مرہون منت ہے۔

اس موقع پر تقریب میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اعلیٰ افسران اور مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے معزز مہمانوں کے ساتھ ساتھ پاس آؤٹ ہونے والے جوانوں کے عزیز و اقارب بھی شریک تھے۔

تقریب میں پاکستان رینجرز (سندھ) کے اینٹی ٹیررسٹ اسکواڈ نے جرائم پیشہ افراد سے نمٹنے کے لیے کی جانے والے کارروائیوں کا عملی مظاہرہ پیش کیا جسے حاضرین نے بے حد سراہا۔

Email This Post

آپ یہ بھی پسند کریں گے مصنف سے زیادہ

تبصرے بند ہیں.